درد دل کی دوا کرے کوئی

سید غافر رضوی فلک چھولسی

درد دل کی دوا کرے کوئی

سید غافر رضوی فلک چھولسی

MORE BYسید غافر رضوی فلک چھولسی

    درد دل کی دوا کرے کوئی

    میرے حق میں دعا کرے کوئی

    سرخ رو اس طرح بھی ہوتے ہیں

    خون دل کو حنا کرے کوئی

    صبر یہ ہے کہ اف نہ ہو لب پر

    لاکھ جور و جفا کرے کوئی

    مجمع عام میں اکیلا ہوں

    درد میرا سنا کرے کوئی

    روز روشن بنے شب ہجراں

    چاک بند قبا کرے کوئی

    جو ہے شیطاں رہے گا شیطاں ہی

    قدسیوں میں رہا کرے کوئی

    عظمتوں کا فلکؔ مقدر ہو

    صدق دل سے جھکا کرے کوئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY