درد کا گہرا سمندر اور میں

کوثر صدیقی

درد کا گہرا سمندر اور میں

کوثر صدیقی

MORE BYکوثر صدیقی

    درد کا گہرا سمندر اور میں

    زندگی کا سر پہ پتھر اور میں

    اس طرف شیشے ہی شیشے اور وہ

    اس طرف پتھر ہی پتھر اور میں

    ہے یہی عہد جنوں کی یادگار

    ایک کوچہ ایک پتھر اور میں

    ٹوٹ جانے کو ہیں سب جام و سبو

    ایک لغزش ایک ٹھوکر اور میں

    بن گیا تاریخ کا خونیں ورق

    پشت میں پیوست خنجر اور میں

    یہ مثلث عہد کی تاریخ ہے

    ایک قاتل ایک خنجر اور میں

    یہ مثلث دیکھ کیا لاتا ہے رنگ

    میرا سر میرا ہی پتھر اور میں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY