درد و غم سب سنانے بیٹھے ہیں

رضی رضی الدین

درد و غم سب سنانے بیٹھے ہیں

رضی رضی الدین

MORE BYرضی رضی الدین

    درد و غم سب سنانے بیٹھے ہیں

    چھیڑ اپنے فسانے بیٹھے ہیں

    آشیاں کو جلا کے جی نہ بھرا

    اب وہ ہم کو جلانے بیٹھے ہیں

    تم نہ تھے تو یہاں پہ کوئی نہ تھا

    آج کتنے دوانے بیٹھے ہیں

    اس فقیری کی پادشاہی تو دیکھ

    فرش کو عرش مانے بیٹھے ہیں

    آستانہ ترا خدا کا گھر

    اور ہم آزمانے بیٹھے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے