درد تیرا مرے سینے سے نکالا نہ گیا

عین الدین عازم

درد تیرا مرے سینے سے نکالا نہ گیا

عین الدین عازم

MORE BY عین الدین عازم

    درد تیرا مرے سینے سے نکالا نہ گیا

    اک مہاجر کو مدینے سے نکالا نہ گیا

    میں ترے ساتھ گزارے ہوئے دن جیتا رہا

    ایک پل بھی تجھے جینے سے نکالا نہ گیا

    ایک موتی بھی نہ ابھرا مری آنکھوں میں کبھی

    تیرے بن کچھ بھی دفینے سے نکالا نہ گیا

    جب نکالا ہے مجھے دل سے تو روتے کیوں ہو

    تم سے کانٹا بھی قرینے سے نکالا نہ گیا

    لقمۂ تر نہ ملے گا ترے نازک تن کو

    گر مرے خون پسینے سے نکالا نہ گیا

    میں نے مانگا تھا بس اک دھوپ کا ٹکڑا عازمؔ

    وہ بھی ساون کے مہینے سے نکالا نہ گیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY