دشت لے جائے کہ گھر لے جائے

ثروت حسین

دشت لے جائے کہ گھر لے جائے

ثروت حسین

MORE BYثروت حسین

    دشت لے جائے کہ گھر لے جائے

    تیری آواز جدھر لے جائے

    اب یہی سوچ رہی ہیں آنکھیں

    کوئی تا حد نظر لے جائے

    منزلیں بجھ گئیں چہروں کی طرح

    اب جدھر راہ گزر لے جائے

    تیری آشفتہ مزاجی اے دل

    کیا خبر کون نگر لے جائے

    سایۂ ابر سے پوچھو ثروتؔ

    اپنے ہم راہ اگر لے جائے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دشت لے جائے کہ گھر لے جائے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY