دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابل دید ہوا

ابن انشا

دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابل دید ہوا

ابن انشا

MORE BY ابن انشا

    دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابل دید ہوا

    ایک ستارہ بیٹھے بیٹھے تابش میں خورشید ہوا

    آج تو جانی رستہ تکتے شام کا چاند پدید ہوا

    تو نے تو انکار کیا تھا دل کب نا امید ہوا

    آن کے اس بیمار کو دیکھے تجھ کو بھی توفیق ہوئی

    لب پر اس کے نام تھا تیرا جب بھی درد شدید ہوا

    ہاں اس نے جھلکی دکھلائی ایک ہی پل کو دریچے میں

    جانو اک بجلی لہرائی عالم ایک شہید ہوا

    تو نے ہم سے کلام بھی چھوڑا عرض وفا کے سنتے ہی

    پہلے کون قریب تھا ہم سے اب تو اور بعید ہوا

    دنیا کے سب کارج چھوڑے نام پہ تیرے انشاؔ نے

    اور اسے کیا تھوڑے غم تھے تیرا عشق مزید ہوا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دیکھ ہماری دید کے کارن کیسا قابل دید ہوا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY