دیکھا جو اس طرف تو بدن پر نظر گئی

ثروت حسین

دیکھا جو اس طرف تو بدن پر نظر گئی

ثروت حسین

MORE BY ثروت حسین

    دیکھا جو اس طرف تو بدن پر نظر گئی

    اک آگ تھی جو میرے پیالے میں بھر گئی

    ان راستوں میں نام و نسب کا نشاں نہ تھا

    ہنگامۂ بہار میں خلقت جدھر گئی

    اک داستان اب بھی سناتے ہیں فرش و بام

    وہ کون تھی جو رقص کے عالم میں مر گئی

    اتنا قریب پا کے اسے دم بخود تھا میں

    ایسا لگا زمین کی گردش ٹھہر گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY