ڈھونڈھتا ہوں جگہ جگہ سایہ

محمد اسد اللہ

ڈھونڈھتا ہوں جگہ جگہ سایہ

محمد اسد اللہ

MORE BYمحمد اسد اللہ

    ڈھونڈھتا ہوں جگہ جگہ سایہ

    کیا اندھیرا ہوا ترا سایہ

    ہو گیا جسم بھی ہوا آخر

    دیکھتا رہ گیا میرا سایہ

    اپنے سائے میں آپ بیٹھا ہوں

    دھوپ جنگل میں مر گیا سایہ

    سائے کو کون دے گیا ہے بدن

    جسم کو کون کر گیا سایہ

    کیا جدائی کا غم اے رہرو

    خود سے رکھتے ہیں ہم جدا سایہ

    سائبانوں کو اب خدا حافظ

    سر پہ میرے ہے خود خدا سایہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY