دیدہ و دل کی فضا پر غم کے بادل چھا گئے

مخمور سعیدی

دیدہ و دل کی فضا پر غم کے بادل چھا گئے

مخمور سعیدی

MORE BYمخمور سعیدی

    دیدہ و دل کی فضا پر غم کے بادل چھا گئے

    اس کے جاتے ہی نگاہوں کے افق سنولا گئے

    دل تو پتھر بن گیا تھا موم کس نے کر دیا

    مدتوں بعد آج کیوں آنکھوں میں آنسو آ گئے

    تھی سکوت دل سے پہلے بزم ہستی پر خروش

    پھر وہ سناٹا ہوا طاری کہ ہم گھبرا گئے

    بے حسی کا سرد موسم زندگی پر چھا گیا

    دل میں روشن تھے جو انگارے وہ سب کجلا گئے

    روبرو اک اجنبی چہرہ سوالی کی طرح

    آئنہ دیکھا تو اے مخمورؔ ہم گھبرا گئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY