دکھائے گی اثر دل کی پکار آہستہ آہستہ

صدا انبالوی

دکھائے گی اثر دل کی پکار آہستہ آہستہ

صدا انبالوی

MORE BYصدا انبالوی

    دکھائے گی اثر دل کی پکار آہستہ آہستہ

    بجیں گے آپ کے دل کے بھی تار آہستہ آہستہ

    نکلتا ہے شگافوں سے غبار آہستہ آہستہ

    تھمے گی آنکھ سے اشکوں کی دھار آہستہ آہستہ

    رہی مشق ستم جاری اگر کچھ دن جناب ایسے

    ملیں گے خاک میں سب جاں نثار آہستہ آہستہ

    مقدر اس کا مرجھانا ہی تو ہے بعد کھلنے کے

    کلی پر یا خدا آئے نکھار آہستہ آہستہ

    بنا ہے ناظم گلشن کوئی صیاد اب شاید

    پرندے ہو رہے ہیں سب فرار آہستہ آہستہ

    محبت کے مریضوں کا مداوا ہے ذرا مشکل

    اترتا ہے صداؔ ان کا بخار آہستہ آہستہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY