دل اگر مائل عتاب نہ ہو

غواص قریشی

دل اگر مائل عتاب نہ ہو

غواص قریشی

MORE BYغواص قریشی

    دل اگر مائل عتاب نہ ہو

    درد کا درد پھر جواب نہ ہو

    ایسی کروٹ بھی کوئی کروٹ ہے

    جس کے پہلو میں انقلاب نہ ہو

    کیوں چمک اٹھا آج مے خانہ

    تیرے ساغر میں آفتاب نہ ہو

    بحر ہستی میں نا خدائے جہاں

    زندگی صورت حباب نہ ہو

    دل سے کوشش کرے اگر انساں

    غیر ممکن ہے کامیاب نہ ہو

    کیوں پریشان رہتا ہے غواصؔ

    تیری تقدیر محو خواب نہ ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY