دل بھی احساسات بھی جذبات بھی

نعمان شوق

دل بھی احساسات بھی جذبات بھی

نعمان شوق

MORE BYنعمان شوق

    دل بھی احساسات بھی جذبات بھی

    کم نہیں ہیں ہم پہ الزامات بھی

    روک دو یہ روشنی کی تیز دھار

    میری مٹی میں گندھی ہے رات بھی

    مقتدی میرے سبھی میں ہوں امام

    ہیں کمال عشق کے درجات بھی

    چاند اپنے آپ کو کہتے ہو تم

    آؤ دیکھیں ہو گئی ہے رات بھی

    دور تک ہم بھیگتے چلتے رہے

    دیر تک ہوتی رہی برسات بھی

    ساتھ چلنے میں پریشانی بھی ہے

    ہاتھ میں تھامے ہوئے ہیں ہاتھ بھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY