دل گیا دل لگی نہیں جاتی

جلیل مانک پوری

دل گیا دل لگی نہیں جاتی

جلیل مانک پوری

MORE BYجلیل مانک پوری

    دل گیا دل لگی نہیں جاتی

    روتے روتے ہنسی نہیں جاتی

    آنکھیں ساقی کی جب سے دیکھی ہیں

    ہم سے دو گھونٹ پی نہیں جاتی

    کبھی ہم بھی تڑپ میں بجلی تھے

    اب تو کروٹ بھی لی نہیں جاتی

    ان کو سینے سے بھی لگا دیکھا

    ہائے دل کی لگی نہیں جاتی

    بات کرتے وہ قتل کرتا ہے

    بات بھی جس سے کی نہیں جاتی

    آپ میں آئے بھی تو کیا آئے

    لذت بے خودی نہیں جاتی

    ہیں وہی مجھ سے کاوشیں دل کی

    دوست کی دشمنی نہیں جاتی

    ہو گئے پھول زخم دل کھل کر

    نہیں جاتی ہنسی نہیں جاتی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY