دل ہے اپنا نہ اب جگر اپنا

جلیل مانک پوری

دل ہے اپنا نہ اب جگر اپنا

جلیل مانک پوری

MORE BYجلیل مانک پوری

    دل ہے اپنا نہ اب جگر اپنا

    کر گئی کام وہ نظر اپنا

    اب تو دونوں کی ایک حالت ہے

    دل سنبھالوں کہ میں جگر اپنا

    میں ہوں گو بے خبر زمانے سے

    دل ہے پہلو میں با خبر اپنا

    دل میں آئے تھے سیر کرنے کو

    رہ پڑے وہ سمجھ کے گھر اپنا

    تھا بڑا معرکہ محبت کا

    سر کیا میں نے دے کے سر اپنا

    اشک باری نہیں یہ در پردہ

    حال کہتی ہے چشم تر اپنا

    کیا اثر تھا نگاہ ساقی میں

    نشہ اترا نہ عمر بھر اپنا

    چارہ گر دے مجھے دوا ایسی

    درد ہو جائے چارہ گر اپنا

    وضع داری کی شان ہے یہ جلیلؔ

    رنگ بدلا نہ عمر بھر اپنا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے