دل کے در پر قفل پڑا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

علقمہ شبلی

دل کے در پر قفل پڑا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

علقمہ شبلی

MORE BYعلقمہ شبلی

    INTERESTING FACT

    (نذر پرویزؔ شاہدی)

    دل کے در پر قفل پڑا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    خاموشی اب شرط وفا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    بے صوتی اب صوت و صدا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    لفظوں کا دم ٹوٹ گیا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    کل تک تو جھنکار سلاسل کی تھی جینے کا پیغام

    آج یہ کیسا وقت پڑا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    گلشن گلشن صحرا صحرا کس نے پھونکا ایسا فسوں

    اک اک طائر سنگ ہوا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    دل سے رشتہ ٹوٹ گیا ہے اب تو زباں کا بھی شبلیؔ

    اس سے بڑھ کر کوئی سزا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    مآخذ:

    • کتاب : Be-Chehrah Lamhe (Pg. 20)
    • Author : Alqama Shibli
    • مطبع : Shaharyaar Brothers Publications (1975)
    • اشاعت : 1975

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY