دل کے ورق سادہ پہ کچھ رنگ ابھاریں

مخمور سعیدی

دل کے ورق سادہ پہ کچھ رنگ ابھاریں

مخمور سعیدی

MORE BYمخمور سعیدی

    دل کے ورق سادہ پہ کچھ رنگ ابھاریں

    خوں گشتہ تمناؤں کی تصویر اتاریں

    شاید کوئی روزن کوئی کھڑکی نکل آئے

    سر اپنا چلو وقت کی دیوار سے ماریں

    کب تک دل دیوانہ یہ بے وجہ تعاقب

    اب ہاتھ کہاں آئیں گی رم کردہ بہاریں

    برہم ہوئی وہ محفل‌ یاران خوش اوقات

    تنہائی کے لمحات کہاں جا کے گزاریں

    آنگن کی اداسی کو فزوں کر گئیں مخمورؔ

    دیوار پہ بیٹھی ہوئی چڑیوں کی قطاریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY