دل کی دل کو خبر نہیں ملتی

آنند نرائن ملا

دل کی دل کو خبر نہیں ملتی

آنند نرائن ملا

MORE BYآنند نرائن ملا

    دل کی دل کو خبر نہیں ملتی

    جب نظر سے نظر نہیں ملتی

    سحر آئی ہے دن کی دھوپ لیے

    اب نسیم سحر نہیں ملتی

    دل معصوم کی وہ پہلی چوٹ

    دوستوں سے نظر نہیں ملتی

    جتنے لب اتنے اس کے افسانے

    خبر معتبر نہیں ملتی

    ہے مقام جنوں سے ہوش کی رہ

    سب کو یہ رہ گزر نہیں ملتی

    نہیں ملاؔ پہ اس فغاں کا اثر

    جس میں آہ بشر نہیں ملتی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل کی دل کو خبر نہیں ملتی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY