دل کی دنیا دیکھ کر کیوں رنگ دنیا دیکھتے

مخمور جالندھری

دل کی دنیا دیکھ کر کیوں رنگ دنیا دیکھتے

مخمور جالندھری

MORE BYمخمور جالندھری

    دل کی دنیا دیکھ کر کیوں رنگ دنیا دیکھتے

    دیکھنے والو نہیں ہم دیکھ کر کیا دیکھتے

    جلوہ گاہ دل میں آ جاتے وہ بے پردہ اگر

    ہم بھی رنگ‌ بے خودی ہم رنگ موسیٰ دیکھتے

    چودھویں کا چاند ہوتا ہے درخشاں جس طرح

    یوں تصور میں کسی کو جگمگاتا دیکھتے

    غرق ہو جاتے محبت میں محبت آشنا

    ساحل و دریا سے بھی کر کے کنارا دیکھتے

    جذب ہو کر رہ گئے خود ہی نگاہ برق میں

    کیوں کر آنکھوں سے نشیمن اپنا جلتا دیکھتے

    میں کبھی جلوہ ہوں تیرا تو کبھی پرتو مرا

    عمر گزری جا رہی ہے یہ تماشا دیکھتے

    ہوتے وہ جلوہ نما گل پیکر و گل پیرہن

    ہم انہیں مخمورؔ فردوس تماشا دیکھتے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY