دل کی حالت بیاں نہیں ہوتی

عبد السلام

دل کی حالت بیاں نہیں ہوتی

عبد السلام

MORE BYعبد السلام

    دل کی حالت بیاں نہیں ہوتی

    خامشی جب زباں نہیں ہوتی

    حرف حسرت ہے تم نے کیا سمجھا

    زندگی داستاں نہیں ہوتی

    کیا مقابل ہو حسن جاناں کے

    چاندنی بے کراں نہیں ہوتی

    تم جو آؤ تو ہو جواں محفل

    ورنہ کب کہکشاں نہیں ہوتی

    حسن کی بے رخی ادا ٹھہری

    عاشقی بد گماں نہیں ہوتی

    بے قراری کی بس دوا تم ہو

    یہ طبیبوں کے ہاں نہیں ہوتی

    جو یہ ہندوستاں نہیں ہوتا

    تو یہ اردو زباں نہیں ہوتی

    کچھ مراسم سلامؔ رہنے دے

    دشمنی جاوداں نہیں ہوتی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY