دل کی تسکین کو کافی ہے پریشاں ہونا

ساحر دہلوی

دل کی تسکین کو کافی ہے پریشاں ہونا

ساحر دہلوی

MORE BYساحر دہلوی

    دل کی تسکین کو کافی ہے پریشاں ہونا

    ہے توکل بخدا بے سر و ساماں ہونا

    یوں تو ہر دین میں ہے صاحب ایماں ہونا

    ہم کو اک بت نے سکھایا ہے مسلماں ہونا

    اے پری رو ترے دیوانے کا ایماں کیا ہے

    اک نگاہ غلط انداز پہ قرباں ہونا

    کور ہے چشم جسے دعویٔ بینائی ہے

    شرط اول ہے جہاں دیدۂ حیراں ہونا

    ہم سے رندان بلا نوش کا ہے شُرب مدام

    درد آشام مے کلفت ہجراں ہونا

    وقف تسلیم و رضا چاہئے دل عاشق کا

    ساحرؔ آسان نہیں بندۂ جاناں ہونا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY