دل کو کتنا سمجھایا ہے سب مایا ہے

یحیٰ خان یوسف زئی

دل کو کتنا سمجھایا ہے سب مایا ہے

یحیٰ خان یوسف زئی

MORE BYیحیٰ خان یوسف زئی

    دل کو کتنا سمجھایا ہے سب مایا ہے

    کون کسی کا ہو پایا ہے سب مایا ہے

    جب بھی خواب سے باہر آنے کی کوشش کی

    نیند کا عالم گہرایا ہے سب مایا ہے

    ہم نے اپنی خاطر اک سولی بنوا کر

    خود کو اس پر لٹکایا ہے سب مایا ہے

    کیا مظہر کی نسبت ہوتی ہے منظر سے

    کیا سورج ہے کیا سایا ہے سب مایا ہے

    راہ میں بیٹھنے والے لوگوں نے ہی اکثر

    ہم کو راہ سے بھٹکایا ہے سب مایا ہے

    ہم نے زیست معمہ آخر حل کر ڈالا

    سب مایا ہے سب مایا ہے سب مایا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY