دل کوں تجھ باج بے قراری ہے

ولی محمد ولی

دل کوں تجھ باج بے قراری ہے

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    دل کوں تجھ باج بے قراری ہے

    چشم کا کام اشک باری ہے

    شب فرقت میں مونس و ہم دم

    بے قراروں کوں آہ و زاری ہے

    اے عزیزاں مجھے نہیں برداشت

    سنگ دل کا فراق بھاری ہے

    فیض سوں تجھ فراق کے ساجن

    چشم گریاں کا کام جاری ہے

    فوقیت لے گیا ہوں بلبل سوں

    گرچہ منصب میں دو ہزاری ہے

    عشق بازوں کے حق میں قاتل کی

    ہر نگہ خنجر و کٹاری ہے

    آتش ہجر لالہ رو سوں ولیؔ

    داغ سینے میں یادگاری ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY