دل لیے اور دکھا دکھا کے لیے

بیتاب عظیم آبادی

دل لیے اور دکھا دکھا کے لیے

بیتاب عظیم آبادی

MORE BYبیتاب عظیم آبادی

    دل لیے اور دکھا دکھا کے لیے

    کی جفا اور مزے جفا کے لیے

    رند ہم ہیں تو پھر پیے گا کون

    کیا یہ اتری ہے پارسا کے لیے

    آتش ہجر اے معاذ اللہ

    ایک دوزخ ہے مبتلا کے لیے

    جتنے دل تھے بتوں نے چھین لیے

    ایک کعبہ بچا خدا کے لیے

    ہر حسیں پر نہ یوں مٹو بیتابؔ

    ایک کے ہو رہو خدا کے لیے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY