دل میں ان کو بسا کے دیکھ لیا

جامی ردولوی

دل میں ان کو بسا کے دیکھ لیا

جامی ردولوی

MORE BYجامی ردولوی

    دل میں ان کو بسا کے دیکھ لیا

    آگ گھر میں لگا کے دیکھ لیا

    زندگانی وبال دوش ہوئی

    دل کی باتوں میں آ کے دیکھ لیا

    اشک بھر لائی ہیں مری آنکھیں

    اس نے جب مسکرا کے دیکھ لیا

    اور اب کس کا اعتبار کریں

    دل کو اپنا بنا کے دیکھ لیا

    ان کی عادت ہے مسکرا دینا

    ہم نے آنسو بہا کے دیکھ لیا

    ہم کو جادو کا اعتبار نہ تھا

    ان سے نظریں ملا کے دیکھ لیا

    غنچۂ دل کبھی کھلا ہی نہیں

    بارہا مسکرا کے دیکھ لیا

    اختصار جواب کے قرباں

    مسکرا مسکرا کے دیکھ لیا

    کام آتی نہیں وفا جامیؔ

    بارہا آزما کے دیکھ لیا

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY