دل مرا چیخ رہا تھا شاید

ڈاکٹر اعظم

دل مرا چیخ رہا تھا شاید

ڈاکٹر اعظم

MORE BYڈاکٹر اعظم

    دل مرا چیخ رہا تھا شاید

    ضبط سے درد سوا تھا شاید

    ایک الجھن سی رہی آفس میں

    گھر پہ کچھ چھوٹ گیا تھا شاید

    دکھتی رگ کو ہی بنایا تھا ہدف

    وار اپنوں نے کیا تھا شاید

    رخ مرا اس کی طرف رہتا تھا

    وہ مرا قبلہ نما تھا شاید

    میں نے پوچھا تھا محبت ہے تمہیں

    اس نے دھیرے سے کہا تھا شاید

    میں نے کچھ اور کہا تھا اعظمؔ

    اس نے کچھ اور سنا تھا شاید

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY