دل پہ آئے ہوئے الزام سے پہچانتے ہیں

قتیل شفائی

دل پہ آئے ہوئے الزام سے پہچانتے ہیں

قتیل شفائی

MORE BY قتیل شفائی

    دل پہ آئے ہوئے الزام سے پہچانتے ہیں

    لوگ اب مجھ کو ترے نام سے پہچانتے ہیں

    آئینہ دار محبت ہوں کہ ارباب وفا

    اپنے غم کو مرے انجام سے پہچانتے ہیں

    بادہ و جام بھی اک وجہ ملاقات سہی

    ہم تجھے گردش ایام سے پہچانتے ہیں

    پو پھٹے کیوں مری پلکوں پہ سجاتے ہو انہیں

    یہ ستارے تو مجھے شام سے پہچانتے ہیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل پہ آئے ہوئے الزام سے پہچانتے ہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY