دل سے کیا پوچھتا ہے زلف گرہ گیر سے پوچھ

امداد امام اثرؔ

دل سے کیا پوچھتا ہے زلف گرہ گیر سے پوچھ

امداد امام اثرؔ

MORE BYامداد امام اثرؔ

    دل سے کیا پوچھتا ہے زلف گرہ گیر سے پوچھ

    اپنے دیوانے کا احوال تو زنجیر سے پوچھ

    میری جاں بازی کے جوہر نہیں روشن تجھ پر

    کچھ کھلے ہیں تری شمشیر پہ شمشیر سے پوچھ

    پرسش حال کو جاتی ہے کہاں اے لیلیٰ

    قیس کی شکل ہے کیا قیس کی تصویر سے پوچھ

    واقف راز نہیں پیر مغاں سا کوئی

    ہے دلا پوچھنا جو کچھ تجھے اس پیر سے پوچھ

    واقف لذت آزار نہیں ہر کوئی

    کیا مزا غم میں ہے یہ عاشق دلگیر سے پوچھ

    گرمیٔ شوق نہیں ہے تو دہن میں اے شمع

    کس لیے تیری زباں لیتا ہے گلگیر سے پوچھ

    الٹی کیوں پڑتی ہے تدبیر یہ ہم کیا جانیں

    کون الٹ دیتا ہے اس راز کو تدبیر سے پوچھ

    مجھ سے اے داور محشر ہے یہ پرسش کیسی

    پوچھنا ہے تجھے جو کچھ مری تقدیر سے پوچھ

    یوں تو استاد فن شعر بہت سے گزرے

    کس کو کہتے ہیں غزل گوئی اثرؔ میرؔ سے پوچھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے