دلاسا دے وگرنہ آنکھ کو گریہ پکڑ لے گا

محسن اسرار

دلاسا دے وگرنہ آنکھ کو گریہ پکڑ لے گا

محسن اسرار

MORE BYمحسن اسرار

    دلاسا دے وگرنہ آنکھ کو گریہ پکڑ لے گا

    ترے جاتے ہی پھر مجھ کو غم دنیا پکڑ لے گا

    سفر گو واپسی کا ہے مگر تو ساتھ رہ میرے

    مجھے یہ خوف ہے مجھ کو مرا سایہ پکڑ لے گا

    تو اپنے دل ہی دل میں بس مجھے آواز دیتا رہ

    سماعت کو مری ورنہ یہ سناٹا پکڑ لے گا

    نکلنا گھر سے باہر بھی علامت ہے تصادم کی

    جسے تنہائی چھوڑے گی اسے خطرہ پکڑ لے گا

    مرے کھوئے ہوئے لمحے کہیں سے ڈھونڈ کر لا دو

    مگر ہشیار رہنا پاؤں کو رستہ پکڑ لے گا

    اگر میں لوٹ جاؤں عشق سے پہلے کے عالم میں

    تو اس کے قرب سے گزرا ہوا لمحہ پکڑ لے گا

    تو خود بھی جاگتا رہ اور مجھ کو بھی جگاتا رہ

    نہیں تو زندگی کو دوسرا قصہ پکڑ لے گا

    مأخذ :
    • کتاب : shor bhi sannata bhi (rekhta website) (Pg. 123)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے