دن گزرتے ہیں جو اندیشہ و افکار کے ساتھ

پیرزادہ قاسم

دن گزرتے ہیں جو اندیشہ و افکار کے ساتھ

پیرزادہ قاسم

MORE BYپیرزادہ قاسم

    دن گزرتے ہیں جو اندیشہ و افکار کے ساتھ

    دل دھڑکتا ہے مگر رنج گراں بار کے ساتھ

    سینکڑوں برسوں پہ پھیلی ہیں حکایات مگر

    واقعے ایک سے وابستہ ہیں تلوار کے ساتھ

    یوں تو سنگینی و بالا قدی اچھی ہے مگر

    ایک سائے کا تصور بھی ہے دیوار کے ساتھ

    اب کھلا اپنی ہی جانب یہ سفر ہے کہ یہاں

    فاصلے اور بڑھے گرمئ رفتار کے ساتھ

    کسی تنہا سے عجب گرمئ بازار رہی

    ایک انبوہ تمنا تھا خریدار کے ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY