دعائیں مانگنے سے پیشتر مت بھول ملکہ

کومل جوئیہ

دعائیں مانگنے سے پیشتر مت بھول ملکہ

کومل جوئیہ

MORE BYکومل جوئیہ

    دعائیں مانگنے سے پیشتر مت بھول ملکہ

    کہ تخت و تاج تو بس پاؤں کی ہیں دھول ملکہ

    نکل کے تو محل سے روز پرسا دے سکے گی

    یہ قتل عام تو ہے روز کا معمول ملکہ

    انہیں تاوان میں آنکھیں ادا کرنی پڑی ہیں

    یہاں جو خواب بننے میں ہوئے مشغول ملکہ

    اسے سیراب ہونا ہے عطا کی بارشوں سے

    کہ دل کی خاک پر اگتے نہیں ہیں پھول ملکہ

    مجھے معلوم ہیں سب سازشیں درباریوں کی

    مرے کتبے پہ لکھا جائے گا مقتول ملکہ

    محبت ہار کے میں لگ رہی ہوں آج کوملؔ

    کسی اجڑی ریاست کی کوئی معزول ملکہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY