دشمن کی بات جب تری محفل میں رہ گئی

رسا رامپوری

دشمن کی بات جب تری محفل میں رہ گئی

رسا رامپوری

MORE BYرسا رامپوری

    دشمن کی بات جب تری محفل میں رہ گئی

    امید یاس بن کے مرے دل میں رہ گئی

    تو ہم سے چھپ گیا تو تری شکل دل فریب

    تصویر بن کے آئینۂ دل میں رہ گئی

    نکلا وہاں سے میں تو مرے دل کی آرزو

    سر پیٹتی ہوئی تری محفل میں رہ گئی

    دیکھا جو قتل عام تو ہر لاش پر اجل

    اک آہ بھر کے کوچۂ قاتل میں رہ گئی

    میں کیا کہوں رساؔ کہ مرے دل پہ کیا بنی

    تلوار کھچ کے جب کف قاتل میں رہ گئی

    مآخذ:

    • کتاب : intekhaabe-e-sukhan(jild-duum) (Pg. 98)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY