ڈوب کر خود میں کبھی یوں بے کراں ہو جاؤں گا

آزاد گلاٹی

ڈوب کر خود میں کبھی یوں بے کراں ہو جاؤں گا

آزاد گلاٹی

MORE BYآزاد گلاٹی

    ڈوب کر خود میں کبھی یوں بے کراں ہو جاؤں گا

    ایک دن میں بھی زمیں پر آسماں ہو جاؤں گا

    ریزہ ریزہ ڈھلتا جاتا ہوں میں حرف و صوت میں

    رفتہ رفتہ اک نہ اک دن میں بیاں ہو جاؤں گا

    تم بلاؤ گے تو آئے گی صدائے بازگشت

    وہ بھی دن آئے گا جب سونا مکاں ہو جاؤں گا

    تم ہٹا لو اپنے احسانات کی پرچھائیاں

    مجھ کو جینا ہے تو اپنا سائباں ہو جاؤں گا

    یہ سلگتا جسم ڈھل جائے گا جب برفاب میں

    میں بدلتے موسموں کی داستاں ہو جاؤں گا

    منتظر صدیوں سے ہوں آزادؔ اس لمحے کا جب

    روز روشن کی طرح خود پر عیاں ہو جاؤں گا

    مآخذ :
    • کتاب : Aab-e-Sharab (Pg. 39)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY