Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ایک چہرے پہ ہیں کئی چہرے

صابر شاہ صابر

ایک چہرے پہ ہیں کئی چہرے

صابر شاہ صابر

MORE BYصابر شاہ صابر

    ایک چہرے پہ ہیں کئی چہرے

    پڑھ نہیں پاؤ گے سبھی چہرے

    خود کی پہچان ہو گئی مشکل

    یوں بدلتی ہے زندگی چہرے

    تیز تھی غم کی دھوپ ہم پر یوں

    کھو چکے کب سے تازگی چہرے

    زہر غم پی کے مسکراتے ہیں

    ان کے دیکھے بھی ہیں کبھی چہرے

    ہر گھڑی کیوں سپاٹ لگتے ہیں

    تن پہ ہوں جیسے کاغذی چہرے

    اب کہاں تاب مسکرانے کی

    خوف سے زرد ہیں ابھی چہرے

    ہم نے دیکھا ہے بارہا صابرؔ

    اپنے لگتے ہیں اجنبی چہرے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے