ایک دن خواب نگر جانا ہے

ادریس بابر

ایک دن خواب نگر جانا ہے

ادریس بابر

MORE BY ادریس بابر

    ایک دن خواب نگر جانا ہے

    اور یونہی خاک بسر جانا ہے

    عمر بھر کی یہ جو ہے بے خوابی

    یہ اسی خواب کا ہرجانا ہے

    گھر سے کس وقت چلے تھے ہم لوگ

    خیر اب کون سا گھر جانا ہے

    موت کی پہلی علامت صاحب

    یہی احساس کا مر جانا ہے

    کسی تقریب جدائی کے بغیر

    ٹھیک ہے جاؤ اگر جانا ہے

    شور کی دھول میں گم گلیوں سے

    دل کو چپ چاپ گزر جانا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY