ایک جیسے نیم جاں ماحول و منظر دور تک

منظر سلیم

ایک جیسے نیم جاں ماحول و منظر دور تک

منظر سلیم

MORE BYمنظر سلیم

    ایک جیسے نیم جاں ماحول و منظر دور تک

    بے نوا بے نام لوگوں کے سمندر دور تک

    بس وہی لفظوں کی بارش ایک سی ہر ابر سے

    ایک سے پیاسی زمینوں کے مقدر دور تک

    خاک ہوتے آتش احساس محرومی سے دل

    برف مایوسی میں جکڑے ذہن اکثر دور تک

    زندگی کو ناگنوں کی طرح ڈستی گولیاں

    زہر بڑھتا پھیلتا اندر ہی اندر دور تک

    دور تک کالے دھوئیں میں خون کی بو تیرتی

    تیرتی اور مرثیے لکھتی ہوا پر دور تک

    مأخذ :
    • کتاب : Aiwan (Pg. 103)
    • Author : Manazir Ashiq Harganvi & Shahid Nayeem
    • مطبع : Nirali Duniya (1998)
    • اشاعت : 1998

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY