ایک تم ہی نہیں دنیا میں جفاکار بہت

غلام ربانی تاباں

ایک تم ہی نہیں دنیا میں جفاکار بہت

غلام ربانی تاباں

MORE BYغلام ربانی تاباں

    ایک تم ہی نہیں دنیا میں جفاکار بہت

    دل سلامت ہے تو دل کے لئے آزار بہت

    ہائے کیا چیز ہے محرومی و غم کا رشتہ

    مل گئے زیست کے ہر موڑ پہ غم خوار بہت

    یاد احباب کی خوشبو سے مہکتی شامیں

    کچھ کہو ہوتی ہیں کمبخت دل آزار بہت

    عشق آوارہ کہاں قید در و بام کہاں

    بے نواؤں کے لیے سایۂ دیوار بہت

    دل کی رفتار بدل جاتی تھی آواز کے ساتھ

    یاد آتا ہے وہ پیرایۂ گفتار بہت

    ایک دن وقت بتائے گا جنوں کی عظمت

    یوں تو ہم لوگ ہیں رسوا سر بازار بہت

    وہ کشاکش ہے کہ جینا بھی ہے دوبھر تاباںؔ

    عشق معصوم بہت حسن فسوں کار بہت

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY