فاختہ شاخ سے اڑتے ہوئے گھبرائی تھی

عطاالحسن

فاختہ شاخ سے اڑتے ہوئے گھبرائی تھی

عطاالحسن

MORE BYعطاالحسن

    فاختہ شاخ سے اڑتے ہوئے گھبرائی تھی

    جب پرندوں کے بلکنے کی صدا آئی تھی

    آبلے میری زباں پر ہیں تو حیرت کیسی

    میں نے اک بار تری جھوٹی قسم کھائی تھی

    کب یہ سوچا تھا برابر سے گزر جائے گا

    میری جس شخص سے برسوں کی شناسائی تھی

    اب وہ کہتا ہے کہ زنجیر بنی میرے لیے

    اس کے پیروں میں جو پائل کبھی پہنائی تھی

    وقت بدلے تو ہر اک رشتہ بدلتا ہے حسنؔ

    دل میں دیوار کہاں پہلے مرے بھائی تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے