نقش آنکھوں میں اتارا جائے گا

سیما شرما میرٹھی

نقش آنکھوں میں اتارا جائے گا

سیما شرما میرٹھی

MORE BYسیما شرما میرٹھی

    نقش آنکھوں میں اتارا جائے گا

    پھر سفر میں دن گزارہ جائے گا

    پہلے داخل ہوگا شب کے شہر میں

    پھر سویرے کو پکارا جائے گا

    جب امیدیں ختم سب ہو جائیں گی

    وقت پھر کیسے گزارہ جائے گا

    ہار کرنوں کا بنا کر جھیل کے

    آئنہ میں دن سنوارا جائے گا

    دیکھ لے گر اک نظر سورج اسے

    کہرہ یہ بے موت مارا جائے گا

    تھام کر رکھ تنکا ورنہ ایک دن

    ہاتھ سے یہ بھی سہارا جائے گا

    جب بھٹک جائے گا صحرا میں بہت

    تب سمندر کو پکارا جائے گا

    بے بسی میں ڈوبی نظروں سے فلک

    اب قفس سے بس نہارا جائے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY