فضول شے ہوں مرا احترام مت کرنا

فضا ابن فیضی

فضول شے ہوں مرا احترام مت کرنا

فضا ابن فیضی

MORE BYفضا ابن فیضی

    فضول شے ہوں مرا احترام مت کرنا

    فقط دعا مجھے دینا سلام مت کرنا

    کہیں رکے تو نہ پھر تم کو راستہ دے گی

    یہ زندگی بھی سفر ہے قیام مت کرنا

    وہ آشنا نہیں خوابوں کی معنویت کا

    ہمارے خواب ابھی اس کے نام مت کرنا

    زبان منہ میں ہے تار گنہ کی صورت

    تمہارا حکم بجا ہے کلام مت کرنا

    مرا وجود کہ ہے دانۂ قناعت سا

    میں اک فقیر پرندہ ہوں دام مت کرنا

    یہ بات سچ ہے یہاں گفتگو عوام سے ہے

    مگر ادب کو گزر گاہ عام مت کرنا

    فضاؔ چراغ و شفق دونوں رہزنوں کی متاع

    جو خیر چاہو تو رستے میں شام مت کرنا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY