غفلت میں فرق اپنی تجھ بن کبھو نہ آیا

میر مستحسن خلیق

غفلت میں فرق اپنی تجھ بن کبھو نہ آیا

میر مستحسن خلیق

MORE BYمیر مستحسن خلیق

    غفلت میں فرق اپنی تجھ بن کبھو نہ آیا

    ہم آپ کے نہ آئے جب تک کہ تو نہ آیا

    ساقی نے جام مے تو شب پے بہ پے دیا پر

    نیت بھری نہ اپنی جب تک سبو نہ آیا

    کوتاہ ہے نہایت دست دعا ہمارا

    دامن اثر کا جا کر اک بار چھو نہ آیا

    عاشق کو تیرے کل سے تھی جاں کنی کی حالت

    سب دیکھنے کو آئے اللہ تو نہ آیا

    پھونکا بھی طور و وادی بعض اے خلیقؔ لیکن

    اپنی شرارتوں سے وہ شعلہ خو نہ آیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY