غلط فہمی کی سرحد پار کر کے

ابن مفتی

غلط فہمی کی سرحد پار کر کے

ابن مفتی

MORE BY ابن مفتی

    غلط فہمی کی سرحد پار کر کے

    مٹا دو فاصلے ایثار کر کے

    یہ کاروبار بھی کب راس آیا

    خسارے میں رہے ہم پیار کر کے

    لگیں صدیاں بنانے میں جو رشتے

    وہ اک پل میں چلے مسمار کر کے

    گلے مل کر ہی دوری دور ہوگی

    ملے گا کیا ہمیں تکرار کر کے

    سگے بھائی بھی اب اک چھت کے نیچے

    وہ رہتے ہیں مگر دیوار کر کے

    مسائل ہیں کہ بڑھتے جا رہے ہیں

    گلوں کا برملا اظہار کر کے

    گنوا دی عزت سادات مفتیؔ

    محبت میں نگاہیں چار کر کے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY