غم نہیں مجھ کو جو وقت امتحاں مارا گیا

امداد امام اثرؔ

غم نہیں مجھ کو جو وقت امتحاں مارا گیا

امداد امام اثرؔ

MORE BYامداد امام اثرؔ

    غم نہیں مجھ کو جو وقت امتحاں مارا گیا

    خوش ہوں تیرے ہاتھ سے اے جان جاں مارا گیا

    تیغ ابرو سے دل عاشق کو ملتی کیا پناہ

    جو چڑھا منہ پر اجل کے بے گماں مارا گیا

    منزل معشوق تک پہنچا سلامت کب کوئی

    رہزنوں سے کارواں کا کارواں مارا گیا

    دوستی کی تم نے دشمن سے عجب تم دوست ہو

    میں تمہاری دوستی میں مہرباں مارا گیا

    زہر سے کچھ کم نہ تھی دعوت مری غیروں کے ساتھ

    کیا غضب ہے گھر بلا کر میہماں مارا گیا

    دشت غربت رنج تنہائی ہجوم درد و یاس

    ان بلاؤں میں ترا عاشق کہاں مارا گیا

    کیا ہلاک عشق تیرے گیسوؤں کا تھا اثرؔ

    سنبلستاں ہو گیا ہے دو جہاں مارا گیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY