غم سے گھبرا کے کبھی نالہ و فریاد نہ کر

عبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

غم سے گھبرا کے کبھی نالہ و فریاد نہ کر

عبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

MORE BYعبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

    غم سے گھبرا کے کبھی نالہ و فریاد نہ کر

    عزت نفس کسی حال میں برباد نہ کر

    دل یہ کہتا ہے کہ دے اینٹ کا پتھر سے جواب

    جو تجھے بھولے اسے تو بھی کبھی یاد نہ کر

    توڑ دے بند قفس کچھ بھی اگر ہمت ہے

    اک رہائی کے لئے منت صیاد نہ کر

    اپنے حالات کو بہتر جو بنانا ہے تجھے

    عہد رفتہ کو کبھی بھول کے بھی یاد نہ کر

    حال کو دیکھ سمجھ وقت کی قیمت اے دوست

    فکر فردا میں کبھی وقت کو برباد نہ کر

    زندگی بنتی ہے کردار سے کردار بنا

    مختصر زیست کے لمحات کو برباد نہ کر

    کبھی بدلا ہے نہ بدلے گا محبت کا مزاج

    اہل دل ہے تو کسی دل کو بھی ناشاد نہ کر

    مدعی علم کا ہے جہل مرکب لا ریب

    قول فیصل ہے فراموش یہ ارشاد نہ کر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY