گر دل سے بھلائی مری چاہت نہیں جاتی

ناہید ورک

گر دل سے بھلائی مری چاہت نہیں جاتی

ناہید ورک

MORE BYناہید ورک

    گر دل سے بھلائی مری چاہت نہیں جاتی

    کیوں پھر تری انکار کی عادت نہیں جاتی

    پھر اوڑھ لی ہے ہم نے ترے نام کی چادر

    پھر دل سے، وہی گھر کی ضرورت نہیں جاتی

    کیوں رات کے پردے میں چھپا دن نہیں آتا؟

    کیوں آنکھ سے لپٹی یہ مسافت نہیں جاتی

    کیوں وقت رکا ہے مری آنکھوں میں ابھی تک؟

    کیوں لمس کی تیرے وہ تمازت نہیں جاتی

    کیوں وصل کی بارش نہیں ہوتی مرے آنگن؟

    کیوں ہجر کی ناہیدؔ یہ حدت نہیں جاتی

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY