گر جذبۂ وحشت کا اے دل یہی عنواں ہے

منظر لکھنوی

گر جذبۂ وحشت کا اے دل یہی عنواں ہے

منظر لکھنوی

MORE BYمنظر لکھنوی

    گر جذبۂ وحشت کا اے دل یہی عنواں ہے

    دو روز کا دامن ہے دو دن کا گریباں ہے

    ہنسنے میں کہ رونے میں مرنے میں کہ جینے میں

    معلوم نہیں کس میں خوشنودیٔ جاناں ہے

    ہم وحشیوں کا مسکن کیا پوچھتا ہے ظالم

    صحرا ہے تو صحرا ہے زنداں ہے تو زنداں ہے

    زنداں میں خیال اتنا اے دست جنوں رکھنا

    تا عمر اسیری ہے اور ایک گریباں ہے

    اللہ زمانے کے دل کو رکھے قابو میں

    ہم جانتے ہیں منظر کیوں چاک گریباں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY