گر تجھ کو ہے یقین اجابت دعا نہ مانگ

مرزا غالب

گر تجھ کو ہے یقین اجابت دعا نہ مانگ

مرزا غالب

MORE BYمرزا غالب

    گر تجھ کو ہے یقین اجابت دعا نہ مانگ

    یعنی بغیر یک دل بے مدعا نہ مانگ

    آتا ہے داغ حسرت دل کا شمار یاد

    مجھ سے مرے گنہ کا حساب اے خدا نہ مانگ

    اے آرزو شہید وفا خوں بہا نہ مانگ

    جز بہر دست و بازوئے قاتل دعا نہ مانگ

    برہم ہے بزم غنچہ بہ یک جنبش نشاط

    کاشانہ بسکہ تنگ ہے غافل ہوا نہ مانگ

    میں دور گرد عرض رسوم نیاز ہوں

    دشمن سمجھ ولے نگۂ آشنا نہ مانگ

    یک بخت اوج نذر سبک باری اسدؔ

    سر پر وبال سایۂ بال ہما نہ مانگ

    گستاخیٔ وصال ہے مشاطۂ نیاز

    یعنی دعا بجز خم زلف دوتا نہ مانگ

    عیسیٰ طلسم حسن تغافل ہے زینہار

    جز پشت چشم نسخہ عرض دوا نہ مانگ

    نظارۂ دیگر و دل خونیں نفس دگر

    آئینہ دیکھ جوہر برگ دعا نمانگ

    مآخذ:

    • کتاب : Ghair Mutdavil Kalam-e-Ghalib (Pg. 68)
    • Author : Jamal Abdul Wahid
    • مطبع : Ghalib Academy Basti Hazrat Nizamuddin,New Delhi-13 (2016)
    • اشاعت : 2016
    • کتاب : Deewan-e-Ghalib Jadeed (Al-Maroof Ba Nuskha-e-Hameedia) (Pg. 245)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY