گر یہی ہے عادت تکرار ہنستے بولتے

منشی امیر اللہ تسلیم

گر یہی ہے عادت تکرار ہنستے بولتے

منشی امیر اللہ تسلیم

MORE BYمنشی امیر اللہ تسلیم

    گر یہی ہے عادت تکرار ہنستے بولتے

    منہ کی اک دن کھائیں گے اغیار ہنستے بولتے

    تھی تمنا باغ عالم میں گل و بلبل کی طرح

    بیٹھ کر ہم تم کہیں اے یار ہنستے بولتے

    میری قسمت سے زبان تیر بھی گویا نہیں

    ورنہ کیا کیا زخم دامن دار ہنستے بولتے

    دل لگی میں حسرت دل کچھ نکل جاتی تو ہے

    بوسے لے لیتے ہیں ہم دو چار ہنستے بولتے

    آج عذر اتقا تسلیمؔ کل تک یار سے

    آپ کو دیکھا سر بازار ہنستے بولتے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    گر یہی ہے عادت تکرار ہنستے بولتے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY