گرچہ سہل نہیں لیکن تیرے کہنے پر لاؤں گا

صادق

گرچہ سہل نہیں لیکن تیرے کہنے پر لاؤں گا

صادق

MORE BYصادق

    گرچہ سہل نہیں لیکن تیرے کہنے پر لاؤں گا

    کاٹ کے اپنے ہاتھوں میں اب اپنا ہی سر لاؤں گا

    جس میں ہوں تیار کھڑی ہر سمت سرابوں کی فصلیں

    اپنے کندھوں پر وہ ریگستان اٹھا کر لاؤں گا

    قوس قزح کے رنگوں سے تیار کروں گا نقش نیا

    رہ جاؤ انگشت بدنداں ایسا منظر لاؤں گا

    ان کی یاد میں بہتے آنسو خشک اگر ہو جائیں گے

    سات سمندر اپنی خالی آنکھوں میں بھر لاؤں گا

    جا پہنچوں گا تخت معلی تک اپنی فریاد لیے

    دست خاص سے لکھوا کر اک نیا مقدر لاؤں گا

    مأخذ :
    • کتاب : kushaad (Pg. 38)
    • Author : saadiq
    • مطبع : meyaar publication (1992)
    • اشاعت : 1992

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY