غریبوں کے آنگن ہیں سب سے بڑے

پونم سوناچھاترا

غریبوں کے آنگن ہیں سب سے بڑے

پونم سوناچھاترا

MORE BYپونم سوناچھاترا

    غریبوں کے آنگن ہیں سب سے بڑے

    یہ دنیا کے گلشن ہیں سب سے بڑے

    بڑی مختصر سی رہی بات یہ

    کہ ہم اپنے دشمن ہیں سب سے بڑے

    ذرا دیکھ جلتے ہوئے شہر کو

    سیاست کے روزن ہیں سب سے بڑے

    کہاں سے چلے ہم کہاں کے لیے

    ترقی کے توسن ہیں سب سے بڑے

    یہ خانہ بدوشی یہ آوارہ پن

    محبت میں پھسلن ہیں سب سے بڑے

    ترا عشق ہم کو تری آرزو

    خوشی کے یہ قدغن ہیں سب سے بڑے

    وہ پونمؔ کی بے چین راتیں صنم

    مرے ساتھ رہزن ہیں سب سے بڑے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY