غزل میں درد کے احساس کو جگائے بغیر

اشوک مزاج بدر

غزل میں درد کے احساس کو جگائے بغیر

اشوک مزاج بدر

MORE BYاشوک مزاج بدر

    غزل میں درد کے احساس کو جگائے بغیر

    ہنر میں آتا نہیں دل پہ چوٹ کھائے بغیر

    تلاش کرتا ہوا پھر رہا ہوں برسوں سے

    کہاں گیا مرا بچپن مجھے بتائے بغیر

    نہ جانے کون سی دنیا میں لوگ جیتے ہیں

    خیال و خواب کی دنیا کوئی بسائے بغیر

    کئی ستارے بڑے بد نصیب ہوتے ہیں

    وہ ڈوب جاتے ہیں پلکوں پہ جھلملائے بغیر

    مجھے غزل بھی مری دادی ماں سی لگتی ہے

    نہیں سلاتی کہانی کوئی سنائے بغیر

    مأخذ :
    • کتاب : Main Ashok Hoon Main Mizaj Bhee (Pg. 131)
    • Author : Ashok Mizaj Badr
    • مطبع : Shere Acadami, Bhopal (2017)
    • اشاعت : 2017

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے